پاکستان بمقابلہ انگلینڈ کرکٹ سیریز کا شیڈول جاری 17سال بعد پاکستان آنے کا فیصلہ

کامن ویلتھ گیمز؛انتظامیہ کی لاپرواہی پاکستانی باکسر ایونٹ میں شرکت سے محروم
August 3, 2022
ایشین کرکٹ کونسل (اے سی سی) نے ایشیاکپ 2022 کا شیڈول جاری
August 3, 2022
Show all

پاکستان بمقابلہ انگلینڈ کرکٹ سیریز کا شیڈول جاری 17سال بعد پاکستان آنے کا فیصلہ

لاہور:پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) نے 17سال بعد اپنی سرزمین پر انگلینڈ کی میزبانی کا شیڈول جاری کردیا ہے۔دونوں ٹیموں کے مابین سات ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچز کی سیریز 20 ستمبر سے 2 اکتوبر تک کراچی اور لاہور میں کھیلی جائے گی۔

 سیریز کے ابتدائی چار میچز نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلے جائیں گے۔ یہ میچز 20، 22، 23 اور 25 ستمبر کو کھیلے جائیں گے۔ باقی تین میچز 28 ، 30 ستمبر اور 2 اکتوبر کو قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے جائیں گے۔یہ تمام میچز پاکستانی وقت کے مطابق شام 7:30 بجے شروع ہوں گے۔

ٹی ٹونٹی سیریز کے بعد دونوں سائیڈز  تین ٹیسٹ میچز پر مشتمل سیریز کھیلنیکے لیے دوبارہ دسمبر میں مدمقابل آئیں گی۔ ڈائریکٹر انٹرنیشنل پی سی بی ذاکر خان نے کہا ہے کہ  انہیں خوشی ہے کہ پاکستان کے ایک مصروف  ہوم انٹرنیشنل سیزن کا آغاز انگلینڈ کرکٹ ٹیم کی کراچی اور لاہور آمد سے ہورہا ہے۔

 آئی سی سی مینز ٹی ٹونٹی ورلڈکپ سے قبل دنیا کی ایک بہترین ٹی ٹونٹی سائیڈ کے خلاف سات میچز کی سیریز کھیلنے سے قومی کرکٹ ٹیم کو میگا ایونٹ کی تیاریوں میں مدد ملے گی۔

 ذاکر خان کا کہنا ہے کہ پاکستان  مارچ/اپریل میں کامیابی سے آسٹریلیا کی میزبانی کرچکا ہے  اور وہ2005 کے بعدپہلی مرتبہ پاکستان کا دورہ کرنے والی  انگلینڈ کی میزبانی کے لیے بھی انہی انتظامات کو دہرائیں گے۔

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ نے انتظامات کا جائزہ لینے کے لیے گزشتہ ماہ پاکستان کا دورہ کرنے والی  ریکی ٹیم کے مطمئن ہونے پر ہی دورے کی تصدیق کی ہے۔ ڈائریکٹر انٹرنیشنل پی سی بی نے کہاکہ  انہیں  یقین ہے کہ شائقین کرکٹ ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل سیریز میں دونوں ٹیموں کو اسپورٹ کرنے اسٹیڈیمز کا رخ کریں گے۔

 ایم ڈی انگلینڈ مینز کرکٹ  ٹیم روب کی کا کہنا ہے کہ انگلینڈ مینز کرکٹ پاکستان واپسی کی منتظر ہے اور سات ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچزپر مشتمل اس سیریز سے انہیں آئی سی سی مینز ٹی ٹونٹی ورلڈکپ کی تیاریوں میں مدد ملے گی۔

 انہوں نے کہا کہ وہ اس سیریز اور پھر رواں سال کے آخر میں پاکستان میں ٹیسٹ سیریز کے انتظامات کے حوالے سے پی سی بی، برطانوی ہائی کمیشن اور دیگر متعلقہ حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں۔

 روب کی کا کہنا ہے کہ وہ  ای سی بی اور پی سی اے کے نمائندگان کی پری ٹور آمد اورٹورز کے شیڈول کی منصوبہ بندی میں تعاون کرنے پر پی سی بی اور مقامی انتظامیہ کے مشکور ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.